Posts

Showing posts from September, 2015

ھم اہل مداریت اس ملک کے اول داعی اسلام ہیں

السلام علیکم  ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

عزیزانِ گرامی وقار  ھم اھل مداریت اس ملک کے اول داعئ  اسلام ھیں

 ھمارے سلسلے کے بانی وامام الطریقہ حاملِ مقامِ صمدیت واصلِ مقامِ محبوبیت فردالافراد قطب الاقطاب حضور پرنور سیدنا سید بدیع الدین احمد زندہ شاہ مدار قدس سرہ اس ملک کے اول پیرانِ پیر ھیں

 لھذا  اسلام وسنیت کا تحفظ اور انکی اشاعت وصیانت ہم پر ھر حال میں لازم وضروری ھے

 درمیان اھلسنت اعتدال و وسطیت کیلئے  ماحول سازی کرنا ھمارے فرائض میں سے ایک فرض  ھے

 تشدد وجبر کا خاتمہ کرکے لوگوں کو اسلام وسنیت کی منزل کی طرف رھنمائی کرنا بھی ھمارے لئے قطعی ضروری ھے

 اولیاء عظام کے سلاسلِ طریقت کی وکالت اور ان پر مخالفین کے اعتراضات کا دفاع بھی ھمارے فرائض میں شامل ھے

 ھندوستان کے تمام خانوادھائے طریقت کوتحفظ فراھم کرانا اور مسلکِ امام ابوحنیفہ قدس سرہ وجماعت اھلسنت کی اشاعت وحفاظت بھی ھمارے فرائض میں اولیت کا درجہ رکھتی   ھے  

نیز علماءاھلسنت کے تئیں ایک صاف ستھرا ماحول بنانا اور انکی تکریم وتعظیم کا عنصر قلوب الناس میں پیدا کرنا بھی ھمارے لئے اھمیت کا حامل  ھے

حضرت سیدنا میر عبدالواحد بلگرامی قدس سرہ ال…

سلسلہ مداریہ کیا ہے ؟silsilay madariya kiya hai?

سلسلۂ مداریہ  کیا ھے ؟؟؟

ایک تعارفی تحریر

ھندوستان میں  مروج تمام سلاسل طریقت ِ میں سلسلۂ مداریہ بالوجوہ ممتاز ومنفرد سلسلۂ طریقت ھے اس سلسلۂ عالی قدر کے بانی قطب الاقطاب فردالافراد حاملِ مقام صمدیت واصلِ مقامِ محبوبیت حضور پرنور سیدنا سید بدیع الدین قطب المدار زندہ شاہ مدار قدس سرہ ھیں آپ نسباً نجیب الطرفین سید آلِ رسول ھیں آپکی آمدِ ھندوستان کے تعلق سے تاریخ سلاطینِ شرقیہ تذکرةالمتقین وغیرہ میں لکھا ھے کہ آپ نے سن 282 ھجری میں سرزمینِ ھند کو اپنے قدومِ میمنت لزوم سے سرفراز کیا اسطور سے یہ بات پایۂ ثبوت کو پہونچی کہ سلسلۂ مداریہ ہی ھندوستان کا سب سے قدیم سلسلۂ بیعت وخلافت ھے اور حضور مدار پاک  ہی ھندوستان کے اول پیرانِ پیر ھیں تبلیغِ اسلام کے حوالے سے اس سلسلۂ مبارکہ کی خدمات آبِ زر سے لکھی جانے کے قابل ھیں
 نفس کشی  زھدورع معرفت  ِ وبصیرت کی تقسیم اس سلسلے کی خاص پہچان ھے یہی وہ سلسلۂ طریقت ھے کہ جس کی تقریباً تین لاکھ خانقاھیں صدیوں تک دینِ حنیف کی اشاعت میں سرگرم رہیں اور آج بھی ھزار امتدادِ زمانہ کے باوجود ان تمام خانقاہوں سے رشدوھدایت کا سلسلہ جاری وساری ھے مشاھدے کی بات ھے کہ …

سبع سنابل کی یہ عبارتیں بھی پڑھ لوکیا ان سے بھی اتفاق رکھتے ہو

سبع سنابل کی یہ عبارتیں بھی پڑھ لو کیا ان سے بھی اتفاق رکھتے ہو؟؟


حضرت خضر پیغمبر علیہ السلام قوالی سننے والوں کے جو تیوں کی   رکھوالی کرتے ھیں

سبع سنابل صفحہ 146


پیارے آقاعلیہ السلام کے والد گرامی بھی جھنمی تھے

سبع سنابل صفحہ 90

اللہ کا ایک ولی جو منصف سبع سنابل کے مرشدوں میں سے ھیں وہ شراب اور بھنگ کے دلدادہ تھے

سبع سنابل صفحہ 180

حضرت ابراھیم علیہ السلام آزر بت پرست سے پیدا ہوئے

سبع سنابل صفحہ 93

اللہ کے ایک ولی حضرت شیخ یوسف چشتی نے لاالہ الااللہ چشتی رسول اللہ پڑھوایا

سبع سنابل صفحہ 277

نماز سے افضل سماع ھے

سبع سنابل صفحہ 364

نیز آپ حضرات کی اس ایمانی کتاب کے اندر بھت ساری باتیں خلاف دین وشریعت لکھی ہوئی ھیں اس کتاب سے خود فاضلِ بریلوی  اور مفتی اختررضاخان ازھری اور بھت سارے اس گروہ کے علماء کلی طور پر متفق نھیں ھیں  مثلاً یہی دیکھ لیجئے کہ علامہ احمدرضا بریلوی نے حضرت ابوطالب رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے کافر ہونے پر مکمل ایک رسالہ تحریر کیا ھے  اور عاقبت کار اصحابِ نار سے لکھا ھے  جبکہ سبع سنابل کے اندر ان برگزیدۂ الھی جانثار رسول کو جنتی لکھا ہواھے   دیکھو سبع سنابل صفحہ 91
اب بت…

چمن میں تلخ.نوائی مری گوارا کر

چمن  میں  تلخ   نوائی مِری    گوارا             کر

دور حاضر کی نئی اصطلاح ""مسلک آعلیٰ حضرت ""کے استعمال    پر  ایک فکر انگیز  تحریر جسے سنجیدگی کیساتھ پڑھنا اھلسنت کے تمام خواص وعوام پر لازم ھے آپ نے اگر ٹھنڈے دل سے پڑھا تو آپ سمجھ جا ئینگے کہ یہ نئی اصطلاح چند غیر مخلص  اور ضدی مزاج علماء ء کے ذھن کی  پیدا وار ھے  حضور فاضلِ بریلوی کا اس اصطلاح سے کوئی تعلق نہیں  ھے
وہ تو اپنے بزرگوں کی قائم کی ہوئی یادگاروں کی حفاظت کےلئے تا عمر ساری قوت داؤ پر لگاےُ رہے

  🔦🔦🔦🔦🔦🔦🔦

محبان محترم احبابِ اھلسنت!! یہ بات کون نہیں جانتا کہ حضور ختمی مرتبت سیدنا محمد رسول اللہ صلیٰ اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اور آپکے نائبین نے تمام فرقہاےُ باطلہ کے درمیان بحیثیت گروہِ ناجیہ اھلسنت وجماعت کو ممتاز فرمایا اور خیر القرون سے لیکر آج تک تمامی اھل اللہ اسی جماعتِ حقّہ کی ایک کڑی بن کر رھے   اور تمام اولیاء کاملین وعلماء ربَّا نیئین اپنے اپنے ادوار میں حتّٰی المقدور ا سی جماعت حقہ کے عقائد و معمولات کی حفاظت واشاعت کے لئے سر بہ کفن نظر آےُ تاریخ شاھد ہے کہ فقھاء کرام و مجتھد ین  عظام کے د…

قطب المدار ایک تعارف qutbulmadar ek taaruf

قطب المدارایک تعارف رضی اللہ عنہ
----------------------------------------------
حضرت سید بدیع الدین زندہ شاہ مدار قدس سرہ
اسم گرامی:سید بدیع الدین احمد ہے۔کنیت ابوتراب ہے۔بعض ممالک میں احمد زندان صوف کے نام سے مشہور ہیں۔اہل تصوف اور اہل معرفت وحقیقت آپ کوعبداللہ ،قطب المدار،فردالافرادکہتے ہیں مدارعالم، مداردوجہاں ، مدارالعالمین،شمس الافلاک آپکے القابات مقدسہ ہیں برصغیر ہندوپاک میں زندہ شاہ مدار اور زندہ ولی کے نام سے زیادہ شہرت حاصل ہے۔
 ولادت باسعادت:آپکی ولادت باسعادت صبح صادق کے وقت پیر کے دن یکم شوال المکرم 242ہجری بمطابق856عیسوی میں ملک شام کے شہرحلب میں محلہ"جنار" میں ہوئی "صاحب عالم "سے سن ولادت کی تاریخ نکلتی ہے۔
والدماجد کا نام: سید قاضی قدوۃ الدین علی حلبی ہے اوروالدہ موصوفہ سیدہ فاطمہ ثانیہ عرف بی بی ہاجرہ سےمشہورہیں آپ حسنی حسینی سید ہیں حضرت سید بدیع الدین زندہ شاہ مدار رضی اللہ تعالی اپنا حسب ونسب ان الفاظ میں بیان فرماتے ہیں: اناحلبی بدیع الدین اسمی بامی وامی حسنی حسینی جدی مصطفے سلطان دارین محمداحمدومحمودکونین ۔ ترجمہ : میں حلب کا رہنے والا ہوں می…

Sisilay madariya Jaari o saari hai سلسلہ مداریہ جاری وساری ہے

: سلسلہ عالیہ مداریہ جاری وساری
------------↑↑↑---------
 ہے اس مقدس سلسلہ کے بانی قطب الاقطاب حضور سیدنا سید بدیع الدین احمد زندہ شاہمدار قدس سرہ ہیں جو ہندوستان کے اول پیران پیر بھی کہلاتے ہیں آپ کی  جائے ولادت ملک شام شہر حلب ہے آپ یکم شوال المکرم( 242)ھجری میں حضرت سیدہ بی بی ہاجرہ عرف فاطمہ ثانیہ رضی اللہ تعالی عنہا کے بطن سے پیدا ہوئے اور حذیفہ شامی مرعشی قدس سرہ سے علوم قرآن وحدیث وفقہ وتفسیر اور دیگر علوم کا حصول فرمایا اور (259)ھجری دارالسلام یعنی بیت المقدس میں حضرت بایزید بسطامی قدس سرہ النورانی کے.دست بابرکت پر.شرف بیعت حاصل کیا اور خلافت سے.بھی سرفراز ہوئے حضرت سلطان العارفین سیدنا سیدبایزید بسطامی قدس سرہ النورانی کے.علاوہ اور بھی کئی مشائخ طریقت سے آپ نے اکتساب فیض فرمایا '
براہ راست حضرت سید ناسید بدیع الدین احمد قطب المدار زندہ شاہمدار کے خلفاء کی تعداد بہت زیادہ ہے (طبقات شاہجہانی)اور علامہ ڈاکٹر محمد عاصم اعظمی کی کتاب تذکرہ مشائخ عظام میں تحریر ہے کہ حضرت زندہ شاہمدار نے کافی طویل عمر پائی اس لئیے آپ کے مریدین اور خلفا کا شمار غیر ممکن ہے"
مستند کتاب بحر ذ…

سلسلہ مداریہ کے سوخت کا قصہ محض جعلی ہے

سلسلہُ مداریہ کے سوخت کا قصّہ محض جعلی ھے

علماء ربانیین اولیاء کاملین اور سلف و صالحین کےملفوظات وارشادات ومکتوبات کے مدّ نظر یہ بات سمجھ میں آتی ھے کہ  سلسلہُ مداریہ کے سوخت کا قصّہ قطعی جعل ودجل وفریب ھے                         تمام خانوا دہاےُ تصوف میں یہ سلسلہ جاری وساری ھے صوفیاء کرام ھردور میں اسکی سندیں لکھتے آےُ اھل تصوف متواتراً متعدد طرق سے اس سلسلہُ پاک کی اسانید اپنی کتابوں میں تحریر فرمائیں  خود خاندان قطب المدار کے مشائخ سے اس سلسلے کی سینکڑوں شاخوں کا انشعاب ھوا  بھتّر گروہ تو صرف حضرت سید جمال الدین جان من جنتی قدس سرہ سے نکلے  جنکے فیوض سے اکناف عالم کا ذرہ ذرہ فیضاب ھے مسالک السالکین میں اسپر تفصیلی گفتگو موجود ھے  جس  سلسلہُ عالی قدر کا فیض ھر گاؤں ھر گھر ھر شھر تک پہونچا   اور آج تک  نشانیاں باقی ھیں وہ عظیم القدر سلسلہ کس طرح سے سوخت ھو سکتا ہے  تعجب خیز بات ھے      لفظ ملنگ   اسی "سلسلے کی اصطلاح ھے   فیروز اللغات  میں لکھا ھے کہ ملنگ سلسلہُ مداریہ سے وابستہ ھوتے ہیں   اور مشاھدہ ھے کہ ھندوستان میں شائد بائد ھی کوئی ایسا علاقہ ہوگا جہاں ملنگانِ پاکباز کی ڈ…

مکنپور شریف تاریخ کے آئینے میں makanpur taareekh k aayne me

: گھنے اور بلند قامت درختوں کے ساے میں آباد - جنت نشاں ..ایک چھوٹا سا قصبہ -...چنار ..اتنا دلکش .خوبصورت جیسے صناع عالم نے تمام تر رعنائیاں اسکے مقدر میں ثبت کردی ہوں  چنار کے دامن میں تاروں کی بارات .. مانگ میں کہکشاں کا سندور ..گھنیرے درختوں کے ساے زلف واللیل کا صدقہ ..پھولوں کی شباہت ورنگت اللہ اللہ..باغ مدینہ کی بھینی بھینی مہک نے خاروں پر عطر بیزی کا کام کیا ہر طرف رونق و خوبصورتی ہے ویسے بھی ماہ نور کی آمد آمد کا ڈنکا اہل ایمان کی بستیوں میں بج رھا تھا جس کی دھمک سے کفر والحاد کے بلند و بالا قلعوں کی فصیلیں درہ کھا گئیں عکس مدینہ سے تابندہ ..منور .درخشاں..قصبہ چنار ..میں آج اتنی رونق تھی جیسے اہل حق کی بستیوں میں رمضان المبارک کی آمد آمدپر چہل پہل اور خوشیوں کی لہر ہوتی ہے ماہ صفر کی الوداع تھی مطلع افلاک وانوار پر ماہ ربیع الاول کے چاند کی نمود نے اھل ایمان کو زیارت کراکے چہر وں پر آثار تازگی آنکھوں کو نور  دلوں کو سرور بخشا خاصان خدا کی جماعتوں میں اتنا طرب ..اتنی شادمانی ..اتنی مسرتیں تھیں جس سے بزم ولایت میں نیرنگیاں جھلک رہی تھیں  .
حسب معمول امام الاصفیا خاصہ کبریا سید الط…

سلسلہ مداریہ جاری ہے

سلسلہ عالیہ مداریہ جاری وساری
------------↑↑↑---------
 ہے اس مقدس سلسلہ کے بانی قطب الاقطاب حضور سیدنا سید بدیع الدین احمد زندہ شاہمدار قدس سرہ ہیں جو ہندوستان کے اول پیران پیر بھی کہلاتے ہیں آپ کی  جائے ولادت ملک شام شہر حلب ہے آپ یکم شوال المکرم( 242)ھجری میں حضرت سیدہ بی بی ہاجرہ عرف فاطمہ ثانیہ رضی اللہ تعالی عنہا کے بطن سے پیدا ہوئے اور حذیفہ شامی مرعشی قدس سرہ سے علوم قرآن وحدیث وفقہ وتفسیر اور دیگر علوم کا حصول فرمایا اور (259)ھجری دارالسلام یعنی بیت المقدس میں حضرت بایزید بسطامی قدس سرہ النورانی کے.دست بابرکت پر.شرف بیعت حاصل کیا اور خلافت سے.بھی سرفراز ہوئے حضرت سلطان العارفین سیدنا سیدبایزید بسطامی قدس سرہ النورانی کے.علاوہ اور بھی کئی مشائخ طریقت سے آپ نے اکتساب فیض فرمایا '
براہ راست حضرت سید ناسید بدیع الدین احمد قطب المدار زندہ شاہمدار کے خلفاء کی تعداد بہت زیادہ ہے (طبقات شاہجہانی)اور علامہ ڈاکٹر محمد عاصم اعظمی کی کتاب تذکرہ مشائخ عظام میں تحریر ہے کہ حضرت زندہ شاہمدار نے کافی طویل عمر پائی اس لئیے آپ کے مریدین اور خلفا کا شمار غیر ممکن ہے"
مستند کتاب بحر ذخ…